گرما گرم خبریں

مسقط میں حا دثہ کا شکار ہو نے والی گو جر خان کی فیملی کی میتیں منگل کو پا کستان پہنچ گئی ہیں
سلیمان فاؤنڈیشن کے تحت دولتالہ میں جشن آزادی کا شاندار پروگرام
ہمارا مشن دیہاتی عورتوں میں شعور اجاگر کرنا ہے، ثمینہ امیر راجہ
راجہ عامر سعید آف نتھہ چھتر نے دولتالہ میں نوجوانوں کیلئے حاجی فیض علی سٹیڈم بنانے کا اعلان کردیا
گوجرخان : پولیس کی بروقت کاروائی، جواری گرفتار ، پولیس نے بھاری رقم قبضے میں لے لی
جعلی سیاستدانوں سے چھٹکارا وقت کی ضرورت بن چکا ہے،ریاض محمود مغل
گوجرخان،فرانس پلٹ جوان کے قتل کی ایف آئی آر درج کر لی گئی
اسسٹنٹ کمشنر مہرین فہیم عباسی کی قیادت میں آ زادی واک ہو ئی

بنیادی مرکز صحت کسراں میں عرصہ سات ماہ سے میڈیکل آفیسر ہی نہیں

Daultala pic dated 12.1.17
سید اڈا (نمائندہ راول نیوز )بنیادی مرکز صحت کسراں میں عرصہ سات ماہ سے میڈیکل آفیسر ہی نہیں ،فی میل ٹیکنیشن ہسپتال کو چلا رہی ہے،اہل علاقہ کا وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف اور وزیر صحت سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔یو نین کو نسل سید کے علاقہ کسراں میں بنیادی مرکز صحت کو ایک لیڈی ٹیکنیشن فلک ناز میڈیکل آفیسر کی جگہ اپنی ڈیو ٹی سرانجام دے رہی ہے،سات ماہ سے ڈاکٹر ہی نہیں ،جو بھی یہاں تعینات ہو تا ہے یہ بہانہ بنا کر اپنے اثرورسوخ سے ٹرانسفر کرا لیتا ہے کہ کہ ہمارے معیار کا ہسپتال اور ایریا نہیں،ہسپتال کی بلڈنگ انتہائی خطرناک حالت میں ہے ،کسی بھی وقت کوئی بڑا حادثہ رونما ہو سکتا ہے،ہسپتال کے صحن میں موجود ویران اور کچا کنواں کسی بھی وقت کوئی مریض خاص کر خواتین بچے حادثے کا شکار ہوسکتے ہیں، لیڈی ٹیکنیشن فلک ناز کا کہنا ہے کہ متعدد بار اپنے ادارہ کے افسران کو بزریعہ لیٹر اگاہ کر چکی ہوں کہ اس کنو یں اور بلڈنگ کا کچھ حل کیا جائے تاکہ کسی بڑے حادثہ سے بچہ جا سکے،پر کوئی شنوائی نہیں ہوئی، اور ہسپتال میں سٹاف کی جگہ نیولوں کا راج ہے،اور ہسپتال گھاس درخت جڑی بوٹیاں جنگل کا مناظر پیش کررہی ہیں،ہسپتال میں میڈیکل آفیسر کے علاوہ،ایل ایچ وی،ڈسپنسر،نائب قاصد،سینٹری ورکر کی تعیناتی عمل میں لائی جائے،گردو انواح کی ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی میڈیکل آفیسر اور سٹاف نہ ہو نیکی وجہ سے دوردراز شہروں میں جاکہ اپنا علاج کرانے پر مجبور ہیں اہل علاقہ نے وزیر اعلیٰ پنجا ب میاں شہباز شریف اور اور وزیر صحت سے پر زور مطالبہ کیا ہے کہ سٹاف کے ساتھ ساتھ ہسپتال کی بلڈنگ اور صحن میں کھلے کنویں پر توجہ دی جائے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: