گرما گرم خبریں

تحریک انصاف میں شمولیت پر راجہ حسیب کیانی کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں،رضوان ہاشمی
ضلع چکوال کی سیاست میں آنے والے چند دنوں میں بڑی سیاسی تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں
کمپیوٹرائزڈ لینڈریکارڈ سنٹر گوجرخان عوام کیلئے دردسر بن گیا
چوہدری زاہد جٹ نے اپنی برادری سمیت تحریک انصاف میں شامل ہونے کا اعلان کردیا
نیا پاکستان بنانے کیلئے پرعزم ہیں،چوہدری جاوید کوثر ایڈووکیٹ
پولیس پٹرولنگ پولیس ٹھاکرہ موڑ چوکی نے مختلف کاروائیوں میں چھ مقدمات درج
نیشنل ہائی وے اینڈ موٹر وے پولیس سیکٹر نارتھ ٹو کی سالانہ ایوارڈ تقریب کا انعقاد

سردار غلام عباس خان کی پی ٹی آئی میں شمولیت کا معاملہ کھٹائی میں پڑگیا

ڈھڈیال ( تجزیہ :ریاض بٹ)سردار گروپ کے قائد سردار غلام عباس خان کی پی ٹی آئی میں شمولیت کا معاملہ کھٹائی میں پڑگیا ۔ تازہ ترین اطلاعات کے مطابق اب یہ اثرات واضح طور پر نظر آنا شروع ہو گئے ہیں کہ سردار غلام عباس کی پی ٹی آئی میں ایڈجسٹمنٹ ناممکن ہو گئی ہے ۔ اس کی کئی وجوہات بیان کی جاسکتی ہیں لیکن ان کا تذکرہ مناسب نہیں۔ پی ٹی آئی شمالی پنجاب کے نائب صدر راجہ یاسر سرفراز نے اپنے آج کے ایک ویڈیو انٹرویو میں کئی باتوں کو کافی حد تک واضح کردیا ہے۔ ذرائع کاکہنا ہے کہ سردار غلام عباس کی پی ٹی آئی میں شمولیت کی صورت میں ضلعی رہنماؤں اور کارکنوں کو شدید تحفظات تھے ان کا خیال تھا کہ سردار غلام عباس کے پی ٹی آئی میں آنے سے پارٹی کی ساکھ کو دھچکا لگنے کے ساتھ ساتھ کارکنوں میں یہ احساس شدت سے پھیلے گا کہ ایک گروپ ان پر حاوی ہوگیا ہے اور آگے چل کر یہ گروپ پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کیلئے مسائل پیدا کرے گا جبکہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان بھی کسی صورت میں سردار غلام عباس کو پارٹی میں لینے کے حق میں نہیں تھے ۔ چیئرمین عمران خان نے ایک موقع پر لچک دکھائی لیکن اس سے قبل سردار غلام عباس ایک سنجیدہ غلطی کرگئے ۔ اگر پی ٹی آئی انہیں پارٹی میں نہ لینے کا واضح اعلان کرتی ہے کہ یہ سی سنجیدہ غلطی کا نتیجہ ہوگا۔سردار غلام عباس کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے صورت میں جو سیٹ اپ ترتیب دیا گیا تھا اس میں راجہ یاسر سرفراز کو پی پی21میں الیکشن لڑنا تھا ۔ ذرائع بتاتے ہیں کہ راجہ یاسرسرفراز کا صوبائی سطح پر الیکشن لڑنا اس کے سیاسی امیج کو سخت نقصان پہنچاتا۔ وہ چیئرمین عمران خان کے انتہائی قریب اور پسندید ہ ہیں اور چیئرمین ان پر انتہائی اعتماد کرتے ہیں۔ صوبائی سیٹ پر آنے کی صورت میں پی ٹی آئی کے اعلیٰ حلقوں میں ایک منفی پیغام جاتا۔موجودہ صورت حال اس جانب اشارہ کررہی ہے کہ سردار غلام عباس پیپلزپارٹی میں شمولیت اختیار کرسکتے ہیں یا پھر وہ آزاد پینل کے ساتھ انتخابی میدان میں اتریں گے ۔ سردار غلام عباس اپنے حالیہ بیانات میں کہہ چکے ہیں کہ وہ کسی سیاسی پلیٹ فارم سے انتخابات میں حصہ لیں گے تو اس سے یہ واضح ہوجاتا ہے کہ پی ٹی آئی میں ایڈجسٹمنٹ نہ ہونے کی صورت میں ان کی اگلی منزل پیپلزپارٹی ہوگی جس میں انہیں نہ صرف فری ہینڈ حاصل ہوگا بلکہ وہ اپنے تمام ساتھیوں کو آسانی سے ایڈجسٹ بھی کرسکیں گے ۔ آئندہ ایک دو روز میں سیاسی صورت حال مزید واضح ہونے کے قوی امکانات ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: