گرما گرم خبریں

اسلام آ باد بندش کے ذمہ دار تحریک لبیک یا رسول اللہ کے مظا ہرین نہیں بلکہ حکمران ہیں ،پی پی پی گو جر خان
شرقی علا قہ میں ہو نے والی ڈکیتی کی واردات کا ضرور سراغ لگا یا جا ئے گا ،ایس ایچ او تھا نہ گو جر خان
نکاسی آ ب کے منصو بے سے شہریوں کو بے پناہ فا ئدہ حاصل ہو گا ، سید ندیم عباس بخاری
سی پیک کا منصو بہ نواز شریف کاعظیم تحفہ ہے ،را جہ طا ہر کیانی
تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کی تعیناتی میرٹ پر کی جا ئے گی

شہیدوں اور غازیوں کی سرزمین 

نبیل گورسی
ngorsi8@gmail. Com
Engr Gorsi
گوجر خان پنجاب کے ان علاقوں کی پٹی میں شامل ہے جہاں کے لوگوں کی ایک بڑی تعداد بیرونِ ملک مقیم ہے۔ شہر میں اس رجحان کی علامات، سائن بورڈز کی شکل میں نظر آتی ہیں جن پر برطانیہ کے ویزے میں مدد کے اشتہار بیوٹی پارلرز کے اشتہارات کے ساتھ ساتھ نمایاں ہیں۔تو گوجر خان میں ایسا کیا ہے، جس کی وجہ سے لوگ اسے چھوڑنا چاہتے ہیں؟آبادی کے لحاظ سے ملک کے سب سے بڑے صوبے کی سب سے بڑی یہ تحصیل اگرچہ ملک کے سابقہ وزیراعظم کا انتخابی حلقہ ہے لیکن یہاں کے رہائشیوں کے بقول ان کا علاقہ نسبتاً پسماندگی کا شکار ہے۔انتظامی طور پر یہ ضلع راولپنڈی میں شامل ہے اور اس کی آبادی تقریباً آٹھ لاکھ ہے۔ شاید اسی لییگوجر خان کے لوگوں کا ایک بڑا مطالبہ یہ ہے کہ اسے الگ ضلع کا درجہ دیا جائے۔گوجر خان کے رہائشیوں کے بقول ان کا علاقہ نسبتاً پسماندگی کا شکار ہے گوجر خان میں ریلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِاعظم راجہ پرویز اشرف نے تالیوں اور نعروں کی گونج میں گوجر خان کو ضلع بنانے کا اشارہ تو دیا مگر بات بنی نہیں۔وزیراعظم راجہ پرویز اشرف دو بار گوجر خان سے منتخب ہوئے ہیں لیکن ایک عام رکنِ اسمبلی کے مقابلے میں اس بار ان کے وزیرِاعظم بننے سیگوجر خان کے لوگوں کا خیال تھا کہ تحصیل کی قسمت چمک گئی ہے۔بطور وزیرِ پانی و بجلی اور وزیرِ اعظم، راجہ پرویز اشرف نے کئی ترقیاتی منصوبوں کا آغاز کیا، جن میں سے ایک کا گیس جنکشن ہے جس سے گوجر خان کو گیس کی فراہمی باآسانی ہو گی۔پردیسیوں کے شہر میں پاسپورٹ کا دفتر نہیں تھا اور وزیراعظم نے اپنے اہلِ حلقہ کو یہ سہولت بھی دلوائی۔اس کے علاوہ وزیرِاعظم کا عہدہ سنبھالنے کے فوراً بعد، انہوں نے گوجر خان سے جانے والی مندرہ سے چکوال اور سوہاوہ سے چکوال تک کی سڑکوں کی منظوری دی۔ان بڑی سڑکوں سے صرف گوجر خان کو ہی فائدہ نہیں پہنچے گا۔ ’اس سڑک سے ان دیہاتیوں کو بہت فائدہ ہوگا جن کی ہسپتالوں اور فصل کی فروخت کرنے کے لیے بازاروں تک رسائی نہیں تھی۔‘ان منصوبوں کے علاوہ راجہ پرویز اشرف نے پوٹھوہار یونیورسٹی کا بھی اعلان کیا یونیورسٹی کے لیے آج تک کام شروع نہ ہوسکا.. یہ ترقیاتی منصوبے سب پاکستان میں حلقے کی سیاست کا حصہ ہے۔ حساب آسان ہے، جتنے کام، اتنے ووٹ۔تاہم پاکستان کے ذرائع ابلاغ میں اور الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے ایسے ترقیاتی منصوبوں پر کھل کر تنقید ہوئی موجودہ ممبر قومی اسمبلی راجہ جاوید اخلاص نہایت شریف انسان ہیں موصوف تین دفعہ ممبر قومی اسمبلی اور ضلع ناظم راولپنڈی بھی رہ چکے ہیں انھوں نے نہ کبھی گوجرخان کو ضلع بنانے کی آواز کی نہ ہی کوئی قابل ذکر پروجیکٹ لا سکے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: