گرما گرم خبریں

الیکشن سر پر ہیں احتجاجی سیاست کا کوئی جواز نہیں،چو ہدری محمد ریا ض
ٹریکٹر ٹرالی پل سے نیچے گر نے پر ایک نو جوان جا ں بحق ہو گیا
پاکستان تحریک انصاف عوام کے شعور کو بند کر رہی ہے،راجہ الطاف حسین
سانحہ ماڈل ٹاؤن میں ریاستی دہشتگردی ہوئی ہے،خرم پرویز راجہ
سانحہ قصوربربریت و سفاکیت کا بدترین واقعہ ہے،شیخ طاہر اشفاق
گوجرخان چوک میں مال روڈ لاہور کے جلسہ میں شرکت کیلئے استقبالیہ کیمپ لگایا گیا
ڈاکٹر را جہ سہیل کو تحصیل ہیڈ کوا رٹر ہسپتال کا میڈیکل سپر نٹنڈنٹ تعینات کیا گیا

مقدس اوراق کا احترام 

نبیل گورسی

ngorsi8@gmail.com

ﭼﮭﻭﭨﮯ ﺏﮍﮮ ﭘﯿﻣﺎﻥﮯ ﭘﺭ ﺭﻭﺯﻣﺮﮦ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﻡﯿﮟ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮨﻭﻥﮯ ﻭﺍﻝﯽ ﺍﺵﯿﺍء ﺑﺎﻟﺨﺼﻮﺹ ﺍﺵﯿﺍﺉﮯ ﺧﻮﺭﺩﻭﻧﻮﺵ ﮐﯽ ﭘﯿﮑﻥﮓ ﮐﮯ ﻟﺊﮯ ﺍﺧﺒﺎﺭﺍﺕ
ﮐﻭ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﯿﺍ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ۔ ﺍﻥ ﺍﺵﯿﺍء ﮐﯽ ﻑﮩﺭﺳﺖ ﺍﺗﻦﯽ ﻃﻮﯾﻝ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻡﯿﮟ ﻡﮑﻣﻞ ﻃﻮﺭ ﭘﺭ ﮔﻭﺵ ﮔﺯﺍﺭ ﮐﺭﻥﮯ ﺱﮯ ﻗﺎﺻﺮ ﮨﻭﮞ۔ ﺁﭖ ﮐﯽ ﺗﻮﺝﮧ ﺍﯾﮏ ﺍﮨﻡ ﺍﻭﺭ ﺣﺴﺎﺱ ﻣﻮﺿﻮﻉ ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﻣﺒﺬﻭﻝ ﮐﺭﻭﺍﻧﺎ ﭼﺍﮨﺗﺎ ﮨﻭﮞ۔ ﮨﻣﺎﺭﮮ ﻣﻌﺎﺷﺮﮮ ﻡﯿﮟ ﺩﮐﺍﻧﺪﺍﺭ ﺍﻭﺭ ﭘﮭﯿﺭﯼ ﻭﺍﻝﮯ ﺍﭘﻥﯽ ﺍﺵﯿﺍء ﮐﻭ ﺩﮐﺍﻧﻮﮞ ﺍﻭﺭ ﭼﮭﺍﺏﮍﯾﻭﮞ ﭘﺭ ﺳﺠﺎﻥﮯ ﮐﯿﻟﺊﮯ ﺍﺧﺒﺎﺭﺍﺕ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﺭﺕﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﺍﺳﺘﻌﻤﺎﻝ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﭘﺭﺍﻥﮯ ﺍﺧﺒﺎﺭﺍﺕ ﮐﻭ ﺱﮍﮐﻭﮞ ﯾﺍ ﮐﻭﮌﮮ ﺩﺍﻧﻮﮞ ﻡﯿﮟ ﭘﮭﯿﻥﮏ ﺩﯾﺕﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﺐﮑﮧ ﺍﻥ ﺍﺧﺒﺎﺭﺍﺕ ﻡﯿﮟ ﻗﺮﺁﻥﯽ ﺁﯾﺍﺕ ﺍﻭﺭ ﺍﺣﺎﺩﯾﺙ ﻝﮑﮭﯽ ﮨﻭﺕﯽ ﮨﯿﮟ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﻓﻼﺡﯽ ﺗﻨﻆﯿﻡﯿﮟ ﺏﮭﯽ ﻣﺬﮨﺏﯽ ﺕﮩﻭﺍﺭ ﻉﯿﺩﺍﻻﺿﺢﯽ ﺍﻭﺭ ﻉﯿﺩﺍﻟﻔﻄﺮ ﭘﺭ ﺯﮐﻭۃ ﮐﮯ ﺣﺼﻮﻝ ﮐﮯ ﻟﺊﮯ ﭼﮭﭙﻥﮯ ﻭﺍﻝﮯ ﺏﯿﻧﺮﺯ ﯾﺍ ﺍﺷﺖﮩﺍﺭﺍﺕ ﭘﺭ ﻗﺮﺁﻥﯽ ﺁﯾﺍﺕ ﺍﻭﺭ ﺍﺣﺎﺩﯾﺙ ﭼﮭﭙﻭﺍﺕﯽ ﮨﯿﮟ ﺟﻦﮩﯿﮟ ﺑﻌﺪﺍﺯﺍﮞ ﺭﺍﺳﺘﻮﮞ ﭘﺭ ﯾﺍ ﮐﻭﮌﮮ ﺩﺍﻧﻮﮞ ﻡﯿﮟ ﺩﯾﮑﮭﺍ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ۔ ﮔﺯﺍﺭﺵ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺟﻮ ﺡﮑﻭﻣﺖﯽ ﺍﻭﺭ ﭘﺭﺍﺉﯿﻭﯾﭧ ﺍﺩﺍﺭﮮ ﺍﺳﻼﻡﯽ ﻋﻠﻮﻡ ﮐﯽ ﺗﺮﻭﯾﺝ ﺍﺷﺎﻋﺖ ﮐﮯ ﻟﺊﮯ ﮐﺍﻡ ﮐﺭ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ‘ ﺍﻥ ﮐﻭ ﯾﮧ ﺫﻡﮧ ﺩﺍﺭﯼ ﺏﮭﯽ ﺗﻔﻮﯾﺽ ﮐﯽ ﺟﺎﺉﮯ ﮐﮧ ﻭﮦ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﺍﺧﺒﺎﺭﺍﺕ‘ ﻣﺠﻞﮯ ﺍﻭﺭ ﺏﯿﻧﺮﺯ ﭘﺭ ﻗﺮﺁﻥﯽ ﺁﯾﺍﺕ ﺍﻭﺭ ﺍﺣﺎﺩﯾﺙ ﮐﯽ ﭼﮭﭙﺍﺉﯽ ﮐﮯ ﻋﻤﻞ ﮐﻭ ﺭﻭﮐﯿﮟ ﺗﺎﮐﮧ ﺍﻥ ﮐﯽ ﺏﮯ ﺣﺮﻣﺖﯽ ‘ﻥﮧ ﮨﻭ ﺱﮑﮯ۔ ﻣﺢﮑﻡﮧ ﺍﻭﻗﺎﻑ ﺍﺳﻼﻡﯽ ﻧﻈﺮﯾﺍﺕﯽ ﮐﻭﻧﺴﻞ ﮐﮯ ﺍﺭﮐﺍﻥ ﻣﺴﺌﻞﮯ ﮐﯽ ﺍﮨﻡﯿﺕ ﮐﻭ ﺍﺟﺎﮔﺭ ﮐﺭﯾﮟ۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: