گرما گرم خبریں

تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کی تعیناتی میرٹ پر کی جا ئے گی
سی پیک کا منصو بہ نواز شریف کاعظیم تحفہ ہے ،را جہ طا ہر کیانی
شرقی علا قہ میں ہو نے والی ڈکیتی کی واردات کا ضرور سراغ لگا یا جا ئے گا ،ایس ایچ او تھا نہ گو جر خان
نکاسی آ ب کے منصو بے سے شہریوں کو بے پناہ فا ئدہ حاصل ہو گا ، سید ندیم عباس بخاری
اسلام آ باد بندش کے ذمہ دار تحریک لبیک یا رسول اللہ کے مظا ہرین نہیں بلکہ حکمران ہیں ،پی پی پی گو جر خان

میجر (ر) راجہ علی رضا آف ماچھیہ سے خصو صی انٹرویو

majar r ali razaمیجر (ر) راجہ علی رضا کا تعلق یوسی پنجگراں کلاں کے بڑے گاؤں ماچھیہ کی راجہ برادری سے ہے وہ نمبردار راجہ شاہ سوار کے بڑے بیٹے ہیں جو کہ اعلی تعلیم یافتہ ، ذہین ، عقلمند، سمجھدار ، معاملہ فہم ، مستقل مزاج اور اعلی کردار اصولوں کے مالک ہیں ان کی تعلیم ایم انگلش ،
ایل ایل بی ہے پاکستان ائیر فورس میں 1977میں بطور پائلٹ کمیشن لیا، سکوارڈن لیڈر ریٹائرڈ ہوئے آرمی کے ساتھ زیادہ سروس گزارنے کی وجہ عام پبلک میں یہ میجر کے نام سے پہنچانے جاتے ہیں یہ بڑے ملنسار انسان ہیں ان کے ساتھ جو بھی ایک دفعہ ملتاہے ان کا گرویدہ ہوجاتا ہے یہ راولپنڈی میں رہنے کے باوجود علاقے کے مسائل سے اگاہی رکھتے ہیں اور خا ص کرکے یہ اہلیان علاقہ کی ہر غمی و خوشی میں شریک ہوتے ہیں اورغریب عوام کے کافی زیادہ بے لوث کام کیے ہیں اور بے پناہ لوگوں کی وجہ روزگار بھی بنے یعنی کے مختلف سرکاری محکموں میں پڑھے لکھے بے روزگار نوجوانوں کو روزگار دلایا یہ نہائت مستقل مزاج ، وعدے کے پکے ہیں اور اپنے علاقے کی سیاسی شخصیات سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف، راجہ جاوید اخلاص ، شوکت بھٹی، سابق تحصیل ناظم چوہدری محمد عظیم کے ساتھ ان کے گہرے مراسم ہیں اور خصو صی رابطہ بھی رکھا ہوا ہے گزشتہ روز راقم سے ان کی گفتگو ہوئی تو یوسی پنجگراں کلاں کے حالات کے متعلق ایک خصوصی انٹرویو کیا
سوال: ہماری یونین کونسل پنجگراں کلاں تین بنیادی سہولیات سے محروم ہیں جن میں مواصلات، صحت اور تعلیم ہیں تو اس کی کیا وجہ آپ کو نظر آتی ہے
ج۔ ہم نے راجہ پرویز اشرف ، راجہ جاوید اخلاص اور شوکت عزیز بھٹی جیسے لیڈروں کو بے پناہ عزت دی ہے وہ سب لوگ بہت اچھے ہیں کمزوری ہمارے لوکل نمائندوں کی ہے جوکہ نااہل ہیں ان کو معلوم نہیں ہے کہ ان سے کیا مانگنا ہے اور کیسے مانگنا ہے یہ صرف اور صرف اپنے ذاتی کام کروا لیتے ہیں
س۔ میجر صاحب ! یہ سب کچھ معلو م ہونے کے باوجود ہم ایسے نمائندے کیوں چنتے ہیں جو بات نہیں کرسکتے اور ہمارے حقوق کے لیے نہیں لڑسکتے ؟
ج۔ ہمارے لوگ بہت شریف اور سادہ ہیں جس کی وجہ ہر ایک کی بات پر یقین کرلیتے ہیں اور کچھ لوگ تو بالکل مفاد پرست ہیں اس لیے عوام کو تو سمجھ لینا چاہیے اور عوامی نمائندے چنتے وقت سمجھداری سے کام لینا چاہیے
س۔ میجر صاحب ہماری یونین کونسل میں تین پینل الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں ، جن میں ایک چوہدری جاوید اختر، راجہ عبدالقیوم اور عابد حسین ملک ہیں ان کے متعلق آپ کا کیا خیال ہے
ج۔ چوہدری جاوید اختر ، ہمارے سابق ناظم بھی تھے یہ انسانی لحاظ سے بہت اچھے انسان ہیں مگر ان کو جو موقع ملا وہ بہت شاندار تھا اس وقت راجہ جاوید اخلا ص ضلع ناظم ، چوہدری عظیم تحصیل ناظم تھے ان کے ان دونوں سے اچھے تعلق تھے مگر یہ یونین کونسل میں کوئی خاطر خواہ کام نہیں کروا سکے کیونکہ گرلز ہائی سکول، ڈاک خانہ ، بغیر ڈاکٹر کے ہسپتال ہماری بنیادی IMG_20131201_114920ضروریات ہیں ، راجہ عبدالقیوم بھی سابق چیئر مین ہیں یہ بھی ذاتی طور پر شریف انسان ہیں مگر اپنے دور میں یہ بھی یوسی میں کوئی خا ص چیز دلوانے میں بہت ناکام رہے ہیں خا ص کرکے سابق
وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے دور میں کافی یونین کونسل کے حالا ت بدل گئے مگر ہم جوں کے توں ہیں اور عابد حسین ملک نئے آدمی ہیں جب سامنے آئیں گے تو پتہ چلے گا ان کے متعلق عوامی آواز اچھی ہے
س۔ میجر صاحب یونین کونسل میں ایک آواز آرہی ہے کہ فلاں مہاجر ہے ، فلاں چوہدری اور راجہ ہے آپ اس ذات پات کے فلسفے کے متعلق کیا کہتے ہیں
ج۔ مجھے ایسی بات سن کر افسو س ہوا کیونکہ بنیادی انسانی حقوق ایک ہیں سب انسان برابرہیں اگر کوئی کسی چوہدری کے گھر پیدا ہوا ہے تو اگر اللہ اسے کسی مہاجر کے گھر پیدا کر دیتا تو کیا اس کا کوئی بس چلتا تھا اور مہاجر بھی انڈیا میں اپنی قومیت رکھتے تھے اگر وہ پڑھے لکھے ہیں اور اہل ہیں تو ہمارے مذہب میں تو اس چیز کو سختی سے منع کیا گیا ہمارے نبی ﷺ کا خطبہ حجتہ الوداع پڑھیں تو معلو م ہوگا اللہ کے نزدیک تو وہ زیادہ ہے جو کہ متقی ہے چاہے جس قوم سے تعلق رکھتا ہے ایسے خیالات سے تو ہمار امذہب بھی روکتا ہے
س۔ آخر میں آپ عوام کو کیا پیغام دینا چاہتے ہیں
ج۔ سب سے پہلے تو میں آپ کا شکر گزار ہوں کہ آپ نے مجھے موقع فراہم کیا اور مجھے فخر ہے کہ آپ جیسے نوجوان لوگ اس معزز شعبے سے وابستہ ہوکر اپنے علاقہ کے تعمیر وترقی میں اپنا کردار ادا کررہے ہیں عوام کو پیغا م ہے کہ وہ اپنا لیڈر چنتے وقت برادری ، راجہ یا چوہدری نہ دیکھیں بلکہ یہ دیکھیں کہ کارکردگی کے لحاظ سے کون اچھا ہے سب سے بڑی چیز تعلیم ہے جوکہ شعو ر دیتی ہے آپ ووٹ کی پرچی کا استعمال کسی برادری کے فرد یا کسی ٹاؤٹ کے کہنے پر نہ کریں بلکہ سو چ سمجھ کر کریں کہ آپ کوپچھتانا نہ پڑے تاکہ ہماری یونین کونسل میں زیادہ نہیں تو کم ازکم بنیادی سہولیات تو آئیں تو میرے خیال میں نئے لوگوں کو آگے آنے کا موقع دیں کیونکہ آزمائے ہوئے کو بار بار آزمانے سے کچھ نہیں ملے گا اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو اور صحیح فیصلہ کرنے کی توفیق دے آمین ثمہ آمین

One comment on “میجر (ر) راجہ علی رضا آف ماچھیہ سے خصو صی انٹرویو

  1. ahsan sittar says:

    Very Well analyzed and highlighted the problems of the said area. Having no Girls High School in a union council, in such an advanced era, truly shows the failure of local representatives. As major sahab said, People of UC-Punjgran should think out of this Caste barrier and select the person who can truly represents their voices and share the solutions in his Manifesto. Well done “Major sahab”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: