گرما گرم خبریں

تحریک انصاف میں شمولیت پر راجہ حسیب کیانی کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں،رضوان ہاشمی
ضلع چکوال کی سیاست میں آنے والے چند دنوں میں بڑی سیاسی تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں
پولیس پٹرولنگ پولیس ٹھاکرہ موڑ چوکی نے مختلف کاروائیوں میں چھ مقدمات درج
چوہدری زاہد جٹ نے اپنی برادری سمیت تحریک انصاف میں شامل ہونے کا اعلان کردیا
کمپیوٹرائزڈ لینڈریکارڈ سنٹر گوجرخان عوام کیلئے دردسر بن گیا
نیشنل ہائی وے اینڈ موٹر وے پولیس سیکٹر نارتھ ٹو کی سالانہ ایوارڈ تقریب کا انعقاد
نیا پاکستان بنانے کیلئے پرعزم ہیں،چوہدری جاوید کوثر ایڈووکیٹ

Category: ڈھڈیال کی خبریں

سردار غلام عباس کے تمام فیصلوں مکمل تائید کرتے ہیں، چوہدری خورشید بیگ


ڈھڈیال( نامہ نگار)وائس چیئرمین ضلع کونسل چکوال چیئرمین چوہدری خورشید بیگ نے سردار گروپ کے ساتھ کسی قسم کے اختلافات کی قیاس آرائیوں اور افواہوں کو یکسر مسترد کردیا ۔ ان کے ترجمان کے جاری کردہ بیان کے مطابق انہوں نے کہا کہ وہ اپنے قائد سردار غلام عباس کے تمام فیصلوں مکمل تائید کرتے ہیں اور وہ اپنے سیاسی مستقبل کے حوالے سے جو بھی فیصلہ اور جس لائحہ عمل کا اعلان کریں گے ہم اس کی مکمل حمایت کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے سردار غلام عباس خان کی قیادت پر مکمل اعتماد ہے اور ہمیں ان کا بھرپور تعاون حاصل ہے ۔ اس سلسلہ میں کسی کو کسی قسم کا کوئی شک نہیں ہونا چاہیے

سٹرک کی تعمیر میں ناقص اور غیر معیاری میٹریل کے استعمال پر شدید احتجاج 


ڈھڈیال( نامہ نگار)قصبہ ڈورے میں وسطی سٹرک کی تعمیر میں ناقص اور غیر معیاری میٹریل کے استعمال پر شدید احتجاج کیا ہے ۔ ٹھیکیدار نے آبادی کی حدود میں سٹرک کی ری سرفسنگ میں انتہائی کم مقدار میں تارکول استعمال کیا جس کی وجہ سے مذکورہ سٹرک تعمیر کے دوسرے روز ہی اکھڑنا شروع ہوگئی اور جگہ جگہ پھر گڑھے بن رہے ہیں ۔ اس طرح آبادی کی غربی جانب بھی ٹھیکیدار غیر معیاری میٹریل استعمال کررہا ہے ۔ اہل دیہہ نے محکمہ ہائی وے کے اعلیٰ حکام سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ لاکھوں روپے مالیت کی تعمیر ہونے والی اس سٹرک میں غیر معیاری میٹریل کے استعمال کا فوری نوٹس لیا جائے

سردار غلام عباس کو پی ٹی آئی کا ٹکٹ ملنے کی صورت میں اپنی منصوبہ بندی مکمل کرلی


ڈھڈیال( نامہ نگار)مسلم لیگ ن نے حلقہ این اے64میں سردار غلام عباس کو پی ٹی آئی کا ٹکٹ ملنے کی صورت میں اپنی منصوبہ بندی مکمل کرلی۔ ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن سردار غلام عباس خان کے پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر الیکشن میں حصہ لینے پر پی ٹی آئی کے نظریاتی کارکنان، چوہدری ایاز امیر کے حامیوں اور پی ٹی آئی میں سردار مخالف افراد کی حمایت حاصل کرنے کیلئے موثر حکمت عملی اپنائے گی ۔ مسلم لیگ ن کے ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کے کارکنان میں 2013کے الیکشن سے چند ماہ قبل سردار غلام عباس کے پی ٹی آئی کو چھوڑنے ، آزاد الیکشن لڑکر پی ٹی آئی کو نقصان پہنچانے اور اب دوبارہ پی ٹی آئی میں شامل ہونے کی کوششوں سے سخت تشویش پائی جارہی ہے ۔ پی ٹی آئی کے نظریاتی کارکنان کا خیال ہے کہ اس موقع پر گزشتہ کئی سال سے پارٹی کیلئے قربانیاں دینے والوں کو نظر انداز کیا گیا تو یہ پارٹی کیلئے تباہ کن ثابت ہوسکتا ہے اور اس صورت حال سے دھڑے بندی سے سیاسی مخالفین بھرپور سے فائدہ اٹھا ئیں گے۔مسلم لیگ ن ضلع چکوال 31مئی کے بعد اپنے باضابطہ رابطے شروع کرنے والی ہے ۔ مسلم لیگ ن کے تمام پارلیمنٹرین آپس میں رابطے میں ہیں اور پی ٹی آئی کے امیدواروں کے اعلان کے بعد اپنی حکمت عملی کوسامنے لائیں گے

پنجاب کی ناقص پالیسیوں اور حکمت عملی سے عوام سے ضروری صحت کی سہولیات بھی چھین لی گئیں


ڈھڈیال( نامہ نگار) حکومت پنجاب کی ناقص پالیسیوں اور حکمت عملی سے عوام سے ضروری صحت کی سہولیات بھی چھین لی گئیں۔ گاؤں میں موجود اے ایم سی سے ریٹائرڈ افراد جو کہ عوام کوان کی دہلیز پر فوری صحت کی طبی سہولیات فراہم کررہے تھے ان کے خلاف کاروائیاں شروع کردی گئیں جس سے انہوں نے کام بند کردیا ، ان کے کام بند ہونے سے گاؤں اور دوردراز کے دیہات میں بسنے والے افراد کی زندگی اجیرن ہوگئی ہے کیونکہ شام چار بجے کے بعد نہ تو کوئی ٹرانسپورٹ مہیا ہوتی ہے اور نہ ہی کوئی ہسپتال ہے جہاں سے فوری طبی امداد مل سکے ۔ بخار ، الٹی ،ا لرجی ، گیس ٹربل وغیرہ کے مریض وہاں موجود ڈسپنسر اور اے ایم سی کے ریٹائرڈ افراد سے وقتی دوائی وغیرہ لے کر اپنا کام چلا لیتے تھے مگر حکومتی پالیسیوں کے باعث اب عوام پریشانی کے عالم میں ہیں کہ وقتی طور پر ملنے والی دوائی بھی بند ہوگئی ہے۔عوامی حلقوں نے ڈی سی چکوال سے اپیل کی ہے کہ وہ آرمی میڈیکل کور کے ریٹائرڈ افراد کو کام کرنے کی اجازت دے تاکہ دوردراز کے دیہات میں رہنے والے فوری طبی امداد سے مستفید ہوسکیں

سردار غلام عباس خان کی پی ٹی آئی میں شمولیت کا معاملہ کھٹائی میں پڑگیا

ڈھڈیال ( تجزیہ :ریاض بٹ)سردار گروپ کے قائد سردار غلام عباس خان کی پی ٹی آئی میں شمولیت کا معاملہ کھٹائی میں پڑگیا ۔ تازہ ترین اطلاعات کے مطابق اب یہ اثرات واضح طور پر نظر آنا شروع ہو گئے ہیں کہ سردار غلام عباس کی پی ٹی آئی میں ایڈجسٹمنٹ ناممکن ہو گئی ہے ۔ اس کی کئی وجوہات بیان کی جاسکتی ہیں لیکن ان کا تذکرہ مناسب نہیں۔ پی ٹی آئی شمالی پنجاب کے نائب صدر راجہ یاسر سرفراز نے اپنے آج کے ایک ویڈیو انٹرویو میں کئی باتوں کو کافی حد تک واضح کردیا ہے۔ ذرائع کاکہنا ہے کہ سردار غلام عباس کی پی ٹی آئی میں شمولیت کی صورت میں ضلعی رہنماؤں اور کارکنوں کو شدید تحفظات تھے ان کا خیال تھا کہ سردار غلام عباس کے پی ٹی آئی میں آنے سے پارٹی کی ساکھ کو دھچکا لگنے کے ساتھ ساتھ کارکنوں میں یہ احساس شدت سے پھیلے گا کہ ایک گروپ ان پر حاوی ہوگیا ہے اور آگے چل کر یہ گروپ پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کیلئے مسائل پیدا کرے گا جبکہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان بھی کسی صورت میں سردار غلام عباس کو پارٹی میں لینے کے حق میں نہیں تھے ۔ چیئرمین عمران خان نے ایک موقع پر لچک دکھائی لیکن اس سے قبل سردار غلام عباس ایک سنجیدہ غلطی کرگئے ۔ اگر پی ٹی آئی انہیں پارٹی میں نہ لینے کا واضح اعلان کرتی ہے کہ یہ سی سنجیدہ غلطی کا نتیجہ ہوگا۔سردار غلام عباس کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے صورت میں جو سیٹ اپ ترتیب دیا گیا تھا اس میں راجہ یاسر سرفراز کو پی پی21میں الیکشن لڑنا تھا ۔ ذرائع بتاتے ہیں کہ راجہ یاسرسرفراز کا صوبائی سطح پر الیکشن لڑنا اس کے سیاسی امیج کو سخت نقصان پہنچاتا۔ وہ چیئرمین عمران خان کے انتہائی قریب اور پسندید ہ ہیں اور چیئرمین ان پر انتہائی اعتماد کرتے ہیں۔ صوبائی سیٹ پر آنے کی صورت میں پی ٹی آئی کے اعلیٰ حلقوں میں ایک منفی پیغام جاتا۔موجودہ صورت حال اس جانب اشارہ کررہی ہے کہ سردار غلام عباس پیپلزپارٹی میں شمولیت اختیار کرسکتے ہیں یا پھر وہ آزاد پینل کے ساتھ انتخابی میدان میں اتریں گے ۔ سردار غلام عباس اپنے حالیہ بیانات میں کہہ چکے ہیں کہ وہ کسی سیاسی پلیٹ فارم سے انتخابات میں حصہ لیں گے تو اس سے یہ واضح ہوجاتا ہے کہ پی ٹی آئی میں ایڈجسٹمنٹ نہ ہونے کی صورت میں ان کی اگلی منزل پیپلزپارٹی ہوگی جس میں انہیں نہ صرف فری ہینڈ حاصل ہوگا بلکہ وہ اپنے تمام ساتھیوں کو آسانی سے ایڈجسٹ بھی کرسکیں گے ۔ آئندہ ایک دو روز میں سیاسی صورت حال مزید واضح ہونے کے قوی امکانات ہیں۔

ہم حلقہ کے عوام کو مایوس نہیں کریں گے،میجرجنرل(ر) حافظ مسروراحمد

ڈھڈیال(نامہ نگار) میجرجنرل(ر) حافظ مسروراحمد نے کہا ہے کہ الیکشن میں حصہ لینا یا نہ لینا ان کے لئے کوئی اہمیت نہیں رکھتا وہ جوبھی فیصلہ کریں گے اس میں ملکی اور چکوال کے مفاد کو ترجیح دی جائے گی ۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ وہ اپنے گروپ اور حلقہ کے عوام سے رابطے میں ہیں اور جو بھی فیصلہ ہوگا اس میں ملکی اور چکوال کے مفادات کاخیال رکھا جائے گا۔ میجرجنرل(ر)حافظ مسرور احمد نے مزید کہا کہ وہ اپنے مشن کی تکمیل کیلئے اپنی بھرپور کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں۔ ہم حلقہ کے عوام کو مایوس نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ صورت حال آئندہ چند روز میں واضح ہوجائے گی اور امید ہے کہ عوا م جلد خوشخبری سنیں گے ۔

مسلم لیگ ن کے پارلیمنٹرین نے ٹکٹ کے لئے درخواستیں جمع کرادی

ڈھڈیال(نامہ نگار)مسلم لیگ ن کے پارلیمنٹرین ایم این اے میجر(ر) طاہر اقبال ، ایم این اے سردار ممتازخان ٹمن اور ایم پی اے سردار ذوالفقار دلہہ نے جمعرات کو مسلم لیگ ن کے ٹکٹ کیلئے مسلم لیگ ن کے لاہور سیکرٹریٹ میں اپنی درخواستیں جمع کرادیں۔ درخواستیں جمع کرانے کے بعد گزشتہ دو ہفتوں سے جاری اس پراپیگنڈے کا خاتمہ ہوگیا جس میں ان پارلیمنٹرین کے بارے میں مختلف افواہیں پھیلاجارہی تھیں۔ ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن کے تمام پارلیمنٹرین آپس میں رابطے میں ہیں اور عنقریب ایک اہم مشاورتی اجلاس ہونے والا ہے جس میں ضلع کی سیاسی صورت حال ، آئندہ کی سیاسی حکمت عملی اور دیگر اہم امور کے بارے میں تفصیلی مشاورت کی جائے گی ۔

طالب علم احتشام علی کو وزیر اعلیٰ پنجاب کی طرف سے لیپ ٹاپ انعام دیا گیا


ڈھڈیال(نامہ نگار)گورنمنٹ یوسی ہائی سکول ڈھڈیال کے طالب علم احتشام علی کو وزیر اعلیٰ پنجاب کی طرف سے لیپ ٹاپ انعام دیا گیا ۔ احتشام علی نے2017کے میٹرک کے امتحانات میں 1003نمبر حاصل کیے تھے ۔ ایک ہزار یا اس سے زائد نمبر لینے والے سٹوڈنٹس میں وزیر اعلیٰ پنجاب کی طرف سے لیپ ٹاپ دینے کا اعلان کیا گیا تھا جو گزشتہ روز وقار النساء پوسٹ گریجویٹ کالج راولپنڈی میں منعقدہ ایک تقریب میں احتشام علی کو لیپ ٹاپ دیا گیا ۔ احتشام علی سپیشل برانچ چکوال کے اے ایس آئی منظور احمد کے صاحبزادے ہیں

ضلع چکوال میں مسلم لیگ ن مکمل طور پر متحدہے، چوہدری ارشد علی خان


ڈھڈیال(نامہ نگار)مسلم لیگ ن بکھاری کلاں کے سرکردہ رہنما چوہدری ارشد علی خان نے کہا ہے کہ پارلیمنٹرین کے مسلم لیگ ن کے ٹکٹ کیلئے درخواستیں دینے سے اس بے بنیاد پراپیگنڈے اور افواہوں کا خاتمہ ہوگیا ہے جو گزشتہ کئی دنوں سے مسلم لیگ ن میں ٹوٹ پھوٹ کا ڈھنڈورہ پیٹ رہے تھے ۔ گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ضلع چکوال میں مسلم لیگ ن مکمل طور پر متحدہے اور ان شاء اللہ بھاری اکثریت سے کامیاب ہوگی۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگی کارکنان سیاسی مخالفین کے منفی ہتھکنڈوں سے کسی صورت میں مرعوب نہیں ہوں گے۔ ضلع میں مسلم لیگ ن کاووٹ بینک محفوظ ہے اور مخالفین کو حسب روایت عبرت ناک شکست کا سامنا کرنا پڑے گا۔چوہدری ارشد علی خان نے کہا کہ مسلم لیگی پارلیمنٹرین جلدہی ایک اہم مشاورتی اجلاس منعقد کرکے اپنی آئندہ کی حکمت عملی طے کریں گے

مندرہ چکوال شاہراہ کو چھ سال میں بھی مکمل کروانے میں ناکام رہے ہیں


ڈھڈیال ( نامہ نگار )دواضلاع کے مسلم لیگ ن کے اراکین اسمبلی دواضلاع سے گزرنے والی اور دو وزراء اعظم کی افتتاح کردہ مندرہ چکوال شاہراہ کو چھ سال میں بھی مکمل کروانے میں ناکام رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق مندرہ چکوال روڈ کی تعمیر وتوسیع کے منصوبہ کا افتتاح پہلی مرتبہ سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے6ستمبر2012اور دوبارہ نااہل وزیراعظم نوازشریف نے 16جولائی 2014کو کیا تھا اور اس منصوبہ کی تکمیل کیلئے ایک سال کا عرصہ مقرر کیا گیا مگر باوجود کہ یہ شاہراہ جن دو اضلاع سے گزرتی ہے وہاں سے مسلم لیگ ن کے اراکین قومی وصوبائی اسمبلی جن میں راجہ جاوید اخلاص، میجر(ر) طاہر اقبال ، عفت لیا قت علی خان، چوہدری لیا قت علی خان مرحوم، راجہ شوکت عزیز بھٹی اور سینیٹر لیفٹیننٹ جنرل (ر) عبدالقیوم منتخب شدہ ہیں اس کے باوجود بھی یہ اراکین اس چھوٹی سی شاہراہ کو چھ سال میں بھی پایہ تکمیل تک نہیں پہنچا سکے ہیں اور اب بھی اس کی تکمیل کے بقایا جات کام نہایت سست روی سے جاری ہیں خصوصاً مندرہ کے نزدیک ریلوے فلائی اوورکی تعمیر کا کام جو کہ ان اراکین کیلئے باعث شرم وندامت ہے

ڈپٹی ڈائریکٹر انفارمیشن چکوال تابندہ امجد کی ڈاکٹر ظہیر احمد خان یوسفی سے ملاقات 


ڈھڈیال ( نامہ نگار )ڈپٹی ڈائریکٹر انفارمیشن چکوال تابندہ امجد نے گزشتہ روز رمضان بازار کے دورہ کے بعد ڈھڈیال پریس کلب کے صدر ڈاکٹر ظہیر احمد خان یوسفی سے ان کے آفس میں ملاقات کی ۔صدر پریس کلب ڈاکٹر ظہیر احمد خان یوسفی نے انہیں ڈھڈیال پریس کلب کے بارے میں تفصیلی بریف کیا۔ا س موقع پر تابندہ امجد نے یقین دلایا کہ ضلع چکوال کے کسی بھی پریس کلب کو کسی بھی کام کے بارے میں ہمارا محکمے کی ضرورت پڑی تو ہمارا محکمہ ہر وقت حاضر ہے

پی ٹی آئی ضلع چکوال میں اپنے امیدواروں کی لسٹ کو حتمی شکل دینے میں مصروف


ڈھڈیال( نامہ نگار) پی ٹی آئی ضلع چکوال میں اپنے امیدواروں کی لسٹ کو حتمی شکل دینے میں مصروف ہے اور آئندہ چنددنوں میں امیدواروں کی نامزدگی کا باضابطہ اعلان کیا جاسکتا ہے۔ پی ٹی آئی کے ایک معتبر ذرائع کے مطابق سردار گروپ کے قائد سردار غلام عباس خان پی ٹی آئی میں مختلف سطح پر پارٹی کے سینئر رہنماؤں سے رابطے کررہے ہیں لیکن چیئرمین عمران خان نے سردار غلام عباس سے ہٹ کر بھی ضلعی قیادت کو گیم پلان کا ٹاسک دیا ہوا ہے جو آئندہ چند روز میں اپنی رپورٹ اعلیٰ قیادت کو پیش کرے گا۔ مذکورہ ذرائع کے مطابق سردار غلام عباس پی ٹی آئی کیلئے آخری آپشن ہوگا۔ علاوہ ازیں پارٹی قیادت کو پیش کی گئی ایک رپورٹ میں چوہدری ایازا میر کو ایک غیر سنجیدہ سیاست دان قرار دیا گیا ہے ۔ راجہ یاسرسرفراز ضلع کے تمام متوقع امیدواروں کیلئے اپنی رپورٹ تیار کررہے ہیں اور چیئرمین عمران خان ان کی مشاورت کے بعد چکوال کے امیدواروں کے ناموں کی حتمی منظوری دیں گے ۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ سردار گروپ سے ابھی معاملات طے نہیں ہوئے جیسے ہی کوئی پیش رفت ہوگی اس بارے میں باضابطہ اعلان جاری کیا جائے گا

راجہ یاسر سرفراز این اے 64کی بجائے پی پی 21سے الیکشن لڑنے کیلئے پرتول رہے 


ڈھڈیال ( ریاض بٹ)پی ٹی آئی شمالی پنجاب کے نائب صدر اور چکوال کے سینئر رہنما راجہ یاسر سرفراز کے سیاسی میدان میں گھٹنے ٹیکنے کی اطلاعات سے پی ٹی آئی کے نظریاتی کارکنوں میں مایوسی کی صدائیں بلند ہونا شروع ہو گئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق راجہ یاسر سرفراز این اے 64کی بجائے پی پی 21سے الیکشن لڑنے کیلئے پرتول رہے ہیں جہاں اس سے قبل چوہدری علی ناصر بھٹی کو ضمنی الیکشن میں نظرانداز کیا جاچکا ہے ۔نظریاتی کارکنوں کو راجہ یاسر سرفراز کی اس حکمت عملی پر خاصی حیرانی ہورہی ہے ۔کارکنان کے مطابق اگر چوہدری علی ناصر بھٹی کو اس دفعہ بھی ایڈجسٹ نہ کیا گیا تو پارٹی کیلئے مسائل پیدا ہوسکتے ہیں ۔پارٹی کی موجودہ صورت حال پر کارکنوں میں شدید بے چینی ہے اور اگر اس الیکشن میں بھی امیدواروں کی نامزدگی میں غلط فیصلے کیے گئے تو پارٹی کے اندر سخت ٹوٹ پھوٹ ہوسکتی ہے ۔ پی ٹی آئی کے ایک نظریاتی ورکر نے دنیا کو بتایا کہ مسلم لیگ ن کے موجودہ سیٹ اپ سے مقابلہ کرنا کچھ آسان کام نہیں ہوگا۔ اگر ذاتی مفاد کو مدنظر رکھ کر فیصلے کیے گئے تو شکست پھر پی ٹی آئی کا مقدر ہوگی۔ پی ٹی آئی کے کارکنان کو فعال کرنے کیلئے رہنماؤں کو سخت جدوجہد کرنا ہوگی اسی صورت میں ہی پارٹی مسلم لیگ ن کو ٹف ٹائم دے سکے گی

حکومت پنجاب رمضان بازاروں کے ذریعے سستی اور معیاری اشیاء کو عوام کی دیلیز پرپہنچارہی 


ڈھڈیال(نامہ نگار)حکومت پنجاب رمضان بازاروں کے ذریعے سستی اور معیاری اشیاء کو عوام کی دیلیز پرپہنچارہی ہے ۔ اعلیٰ اور معیاری اشیاء کی رمضان بازار کے ذریعے فراہمی حکومت کاعزم ہے ۔ آٹا، چینی ، گھی اور دیگراشیاء پر سبسڈی سے بھی عوام مستفید ہورہے ہیں۔ ان خیالات کااظہار ڈپٹی کمشنر چکوال غلام صغیر شاہد نے ڈھڈیال چوک پر قائم رمضان بازار کے دورہ پر کیا۔ دورہ کے موقع پر ان کے ہمراہ ڈسٹرکٹ انفارمیشن آفیسر تابندہ امجد ، چیئر مین ضلع کونسل ملک طار ق اسلم ڈھلی ، نائب تحصیلدار چوہدری غلام عباس ، ممبر ضلع کونسل چوہدری سلیم رضا بھی تھے۔ڈی سی چکوال غلام صغیر شاہد نے تمام اسٹالز کا دوہ کیا اور اشیاء کی کوالٹی اور قیمتوں پر اپنے اطمینان کا اظہار کیا ۔ اس موقع پر رمضان بازارکے انچارج چوہدری سبط الحسن گوندل نے انہیں بازار کے متعلق بریفنگ دی۔

سردار غلام عباس کے پی ٹی آئی کے ساتھ ابھی تک معاملات طے نہیں ہوسکے


ڈھڈیال( ریاض بٹ)مسلم لیگ (ن) کو خیر آبا دکہنے کے بعد سردار غلام عباس کے پی ٹی آئی کے ساتھ ابھی تک معاملات طے نہیں ہوسکے۔ پی ٹی آئی کی قیادت نے سردار غلام عباس خان کی ڈیمانڈ پوری کرنے سے معذوری ظاہر کردی۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ سردارغلام عباس خان کی پی ٹی آئی کے ساتھ ابھی بات بنتے نظر نہیں آرہی۔ پی ٹی آئی کے رہنماؤں کی سردار غلام عباس سے حالیہ ملاقاتوں اور رابطوں کے دوران سردارغلام عباس نے این اے64اور پی پی23کے ٹکٹ کی ڈیمانڈ کی ۔ ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی کی اعلیٰ قیادت نے اپنے رابطہ کاروں کو واضح ہدایات دی ہیں کہ سردار غلا م عباس خان کو صرف ایک سیٹ پر ایڈجسٹ کیا جاسکتا ہے ۔ معلوم ہوا ہے کہ سردار غلام عباس کی جانب سے یہ بھی تجویز دی گئی ہے کہ پی پی23پر سردار آفتاب اکبر کو ایڈجسٹ کیا جائے اور و ہ این اے64پر آزاد حیثیت سے الیکشن لڑسکتے ہیں اور یہاں پی ٹی آئی ان کی حمایت کرے لیکن پی ٹی آئی کی قیادت نے اس تجویز کو قبول نہیں کیا۔ پی ٹی آئی کے باخبر ذرائع نے بتایا ہے کہ پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان موجودہ صورت حال میں بھی سردار غلام عبا س کے لئے کوئی نرم گوشہ نہیں رکھتے اور اب بھی وہ صرف چند سرکردہ رہنماؤں کی وجہ سے کچھ لچک دکھارہے ہیں۔ پی ٹی آئی کے ورکرز این اے64پر راجہ یاسر سرفراز کی نامزدگی چاہتے ہیں اور اس سلسلہ میں پی ٹی آئی کی تمام تنظیموں کا اعلیٰ قیادت پر دباؤ پر ہے کہ این اے64پر کسی صورت میں کوئی سمجھوتہ یا ایڈجسٹمنٹ نہ کی جائے۔ پی ٹی آئی میں شمولیت کے اعلان میں موجودہ تاخیر انہی معاملات کا طے نہ ہونا ہے۔فریقین کے درمیان رابطے جاری ہیں۔ سردار غلام عباس کا پی ٹی آئی میں شامل ہونے یا نہ ہونے کے بارے میں آئندہ چند روز میں فیصلہ ہوجائے گا۔

پیپلزپارٹی کے سینئر رہنماؤں کا سردار غلام عباس خان سے رابطہ ،پارٹی میں شمولیت کیلئے باضابطہ دعوت دے دی 


ڈھڈیال(نامہ نگار)پیپلزپارٹی کے سینئر رہنماؤں کا سردار غلام عباس خان سے رابطہ ،پارٹی میں شمولیت کیلئے باضابطہ دعوت دے دی ۔ ذرائع کے مطابق سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف، پیپلزپارٹی پنجاب کے صدر قمرالزمان کائرہ اور دیگر نے سردار غلام عباس سے رابطے کیے ہیں اور انہیں پیپلزپارٹی میں شمولیت کی دعوت اور انہیں ان کی سیاسی حیثیت کے مطابق مقام دینے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ ابھی تک یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ سردار غلام عباس خان نے پیپلزپارٹی کے رہنماؤں کو کیا جواب دیا ہے ۔یادرہے کہ اس سے قبل آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری نے بھی سردار غلام عباس خان کو پیپلزپارٹی میں شمولیت کی دعوت دی تھی

پی ٹی آئی کے کارکنان نے حلقہ این اے 64سے الیکشن میں حصہ لینے کیلئے راجہ یاسر سرفراز پر دباؤ بڑھا دیا


ڈھڈیال(نامہ نگار)پی ٹی آئی کے کارکنان نے حلقہ این اے 64سے الیکشن میں حصہ لینے کیلئے راجہ یاسر سرفراز پر دباؤ بڑھا دیا ۔ معلوم ہوا ہے کہ راجہ یاسرسرفراز جو الیکشن میں حصہ نہ لینے یاپی پی 21پر انتخاب لڑنے کی خواہش رکھتے تھے کارکنان نے اس پر شدید ردعمل دیتے ہوئے ان پر حلقہ این اے64سے الیکشن لڑنے کیلئے دباؤ میں اضافہ کردیا ہے ۔ پی ٹی آئی ذرائع کے مطابق اگر راجہ یاسر سرفراز نے این اے64سے انتخاب نہ لڑا تو اس سے کارکنا ن کے مورال کو شدید دھچکا لگے گا اور گزشتہ پانچ سال کی محنت رائیگاں ہو جائے گی ۔ ان ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ راجہ یاسر سرفراز کو ہر صورت میں حلقہ این اے64میں لایا جائے گااور ان کی کامیابی کو یقینی بنایاجائے گا۔

سردار غلام عباس کے حامی خوداحتسابی کی بجائے دوسروں کو بلا وجہ تنقید کا نشانہ بنارہے ہیں


ڈھڈیال( ریاض بٹ) سردار گروپ کے قائدسردار غلام عباس کے حامی خوداحتسابی کی بجائے دوسروں کو بلا وجہ تنقید کا نشانہ بنارہے ہیں۔ ہر کامیاب سیاستدان کے پیچھے اس کے قابل مشیر ہوتے ہیں۔ سردار گروپ کے حامیوں کو چاہیے تھا کہ وہ ان عناصر کو بے نقاب اور ان پر تنقید کرکے جنہوں نے سردار غلام عباس خان سے ہمیشہ غلط سیاسی فیصلے کروائے۔ سردار گروپ کی چند ایسی شخصیات کوجانتے ہیں جنہوں نے انہیں چوہدری پرویز الٰہی کو چھوڑے ، پی ٹی آئی میں شامل ہونے ، پھر خیر آباد کہنے اورآخر میں مسلم لیگ ن میں شامل نہ ہونے کا مشورہ دیا۔ شاید سردار غلام عباس کے قریبی ساتھیوں میں ان کے مشورہ کو اہمیت نہ دی گئی جہاں تک سردار غلام عباس کی شمولیت کا معاملہ ہے سب اچھی طرح جانتے ہیں کہ ان کی مسلم لیگ ن میں شمولیت کی ضلع میں کسی بھی سطح پر پذیرائی نہیں کی گئی۔ا علیٰ قیادت نے جب بھی پارلیمنٹرین کو اس ایشو پر مشاورت کیلئے لاہور طلب کیا تو انہوں نے نہ صرف اعلیٰ قیادت کو تفصیلاً ضلعی سیاسی صورت حال سے آگاہ کیا بلکہ اس موقع پر انہوں نے اپنا شدید ردعمل بھی دیا ۔سردار غلام عباس کومسلم لیگ ن میں لانے والوں کے کیا مقاصدتھے اور اعلیٰ قیادت کی کیا مجبوریاں تھیں کہ سردار غلام عباس خان مسلم لیگ ن کے پارلیمنٹرین کی مخالفت کے باوجود مسلم لیگ ن میں شامل ہوئے۔ان کی مسلم لیگ ن میں شمولیت سے دونوں گروپوں میں عدم اطمینان پھیلا اور کسی بھی سطح پر افہام وتفہیم کی صورت حال پید انہ ہوسکی ۔ سردار غلام عباس جو تقریباً31 سال سے مسلم لیگ ن کی مخالفت کررہے تھے مسلم لیگ ن کے حامیوں کیلئے قبول کرنا کسی صورت ممکن نہ تھااور سب سے اہم وجہ دیہات کی سطح پر دھڑے بندیاں تھیں جو اپنے وجود کو ایک دوسر ے میں ضم کرنے کیلئے تیار نہ تھیں۔ سردار غلام عباس کو مسلم لیگ ن میں شمولیت کے بعد یہ واضح تھا کہ دونوں دھڑوں کے درمیان یہ کشمکش لمبے عرصے تک نہیں چلے گی ۔ ضلع کونسل کے چیئرمین اور وائس چیئرمین کے الیکشن کے موقع پر بھی یہ تقسیم واضح نظر آئی ۔ چوہدری حیدرسلطان کے ضمنی الیکشن میں دونوں دھڑوں نے علیحدہ علیحدہ رابطہ مہم چلائی کیونکہ مسلم لیگ ن کے حامیوں کا اپنے رہنماؤں پر شدید دباؤ تھا کہ وہ کبھی بھی ایسی صورت حال کو قبول نہیں کریں گے۔سردار گروپ کے حامیوں کو چاہیے کہ وہ گروپ میں ایسے عناصر کا سراغ لگا ئیں جن کی غلط مشاورت سے سردار گروپ کا ایک بڑا ووٹ بینک ہونے کے باوجود ان کی سیاسی ساکھ کو نقصان پہنچا رہا ہے۔سردار گروپ کو کبھی کسی سیاسی جماعت نے نقصان نہیں پہنچایا اگر اس گروپ کو نقصان پہنچا تو وہ اس گروپ کے اپنے سیاسی فیصلے ہیں۔ اب جبکہ سردار غلام عباس نے مسلم لیگ ن کو خیر آباد کہہ دیا ہے تواس پر بھی سیاسی حلقوں کو خاصی حیرانی ہورہی ہے ۔ ان کے مطابق سردار غلام عباس کو ’’جذبہ حب الوطنی‘‘ کی بجائے ’’ جذبہ ایمانی ‘‘ کے تحت مسلم لیگ ن سے چھٹکارا حاصل کرنا چاہیے تھا۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ ان کے گروپ کی جڑیں پورے ضلع میں ہیں اور وہ انتہائی پرعزم طورپر اپنے رہنماکے ساتھ ہیں لیکن گروپ کے فیصلے اس دھڑے کی سیاسی ساکھ کو نقصان پہنچارہے ہیں۔ سیاسی پارٹیوں اور دھڑوں میں نشیب وفراز آتے رہتے ہیں لیکن اچھے فیصلوں کو ہمیشہ یا درکھا جاتا ہے ۔ سردار غلام عباس خان ایک منجھے ہوئے سیاستدان ہیں یقیناًوہ اپنے سیاسی مستقبل کا فیصلہ سوچ وسمجھ کرکریں گے۔ ضلع چکوال کی سیاست میں آئندہ دوہفتے بڑی اہمیت کے حامل ہیں جس میں سردار غلام عباس خان نے اپنے سیاسی مستقبل جبکہ پی ٹی آئی نے اپنے نامزد امیدواروں کا اعلان کرنا ہے۔ ضلع میں پی ٹی آئی کو مختلف حلقوں میں سخت دباؤ کا سامنا ہے جہاں ایک نشست کیلئے کئی کئی امیدوار ہیں جبکہ پی پی پی بھی ضلعی سیاست پر گھات لگائے اپنے سیاسی شکار کی منتظرہے ۔ اس میں وہ کہاں تک کامیاب ہوتی ہے اس کا فیصلہ بھی جلد ہوجائے گا۔پیپلزپارٹی میں بھی حسب روایت ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے کا سلسلہ جاری ہے ۔ اس بات کا امکان کافی کم ہے کہ مسلم لیگ ن کے امیدواروں میں کوئی تبدیلی کی جائے گی ۔ انتخابی میدان لگنے والا ہے دیکھنا یہ ہے کہ اس مرتبہ کامیابی کس کے حصہ میں آتی ہے

ڈھڈیال کے دکانداروں کو ایک ایک ہزار روپے ٹیکس جمع کرانے کیلئے رسیدیں جاری کردیں


ڈھڈیال ( نامہ نگار)محکمہ ایکسائز چکوال نے مین بازار ڈھڈیال کے دکانداروں کو ایک ایک ہزار روپے ٹیکس جمع کرانے کیلئے رسیدیں جاری کردیں۔ تفصیلات کے مطابق محکمہ ایکسائز چکوال کے دو اہلکار 16مئی کو مین بازار آئے اور دکانوں کے شٹر گیٹ سے نام پڑھ کر ڈائری میں لکھتے رہے۔ بعدازاں ایک گھنٹے کے بعد تمام دکانداروں کو ایکسائز ٹیکس کے نام پر ایک ایک ہزار کی رسیدیں جاری کرتے رہے اور ساتھ ہی ان کو کہا کہ یہ18مئی تک جمع کرائیں ورنہ قانونی کاروائی کی جائیگی ۔ بعض دکانداروں کے استفسار کرنے ملک اعجاز نامی اہلکار جو کہ خود کو ایکسائز پولیس ظاہر کررہا تھا ۔ دکانداروں سے انتہائی بدتمیزی اور بداخلاقی کا مظاہرہ کرتارہا اور کہا کہ جس نے ٹیکس جمع نہ کرایا تو اس کو دیکھ لوں گا۔ عوامی حلقوں نے حکومت پنجاب کے اس اقدام کو ظالمانہ قرار دیا اور محکمہ سے ایک ہزار روپے ٹیکس کو زبردستی وصول کرنا غلط کہا وہیں ایکسائز پولیس کے اہلکار اعجاز کے خلاف کاروائی کی اپیل ہے ورنہ شدید عوامی ردعمل کا خطرہ ہے۔

چکوال کا ایک اور اعزاز 

ڈھڈیال ( نامہ نگار)چکوال کا ایک اور اعزاز ، برطانیہ میں مقیم یونین کونسل جسوال کے قصبہ سوہاہ دیوالیاں کے مشہور ومعروف سیاسی وسماجی گھرانے کے چشم وچراغ ، ملک غلام عباس مرحوم کے صاحبزادے ملک شہزاد عباس نے برطانیہ کے حالیہ بلدیاتی انتخابات میں ‘‘کرالے ‘‘ سے جنرل کونسلر منتخب ہو کر سترہ سالہ ریکارڈ توڑ دیا۔ مذکورہ بلدیاتی انتخابات میں انہوں نے لیبر پارٹی کے ٹکٹ پر الیکشن میں حصہ لیا اوراپنے مدمقابل حکومتی کنزرویٹیو پارٹی کے کیون ہال کو بھاری اکثریت سے شکست دے کر لینگلے گرین سے پہلے پاکستانی نژاد کونسلر منتخب ہونے کا اعزاز حاصل کیا ۔ ملک شہزاد عباس کی جیت سے پاکستانیوں خصوصاً چکوالیوں میں خوشی کی لہر ڈور گئی اور انہیں اس شاندار کامیابی پر مبارکباد دینے والوں کا تانتا بندھ گیا۔

قصبہ ڈورے میں گرلز اور بوائزہائی سکول کی اپ گریڈیشن کی افتتاحی تختی کی نقاب کشائی کردی


ڈھڈیال ( نامہ نگار)سیکرٹری سکولز ایجوکیشن پنجاب ڈاکٹر اللہ بخش ملک نے قصبہ ڈورے میں گرلز اور بوائزہائی سکول کی اپ گریڈیشن کی افتتاحی تختی کی نقاب کشائی کردی۔ مذکورہ دونوں تعلیمی ادارے جوائنٹ سیکرٹری پروفیسر محمد رفیق طاہر کی کوششوں سے اپ گریڈ ہوئے۔ افتتاحی تختی کی نقاب کشائی کی اہم اور منفرد بات یہ تھی کہ اس اہم تقریب میں قصبہ کی کسی بھی شخصیت کوشرکت کی دعوت نہیں دی گئی۔

مسلم لیگ ن کے پارلیمنٹرین نے آئندہ ایک دو روز میں ایک اہم اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا 


ڈھڈیال ( نامہ نگار)مسلم لیگ ن کے پارلیمنٹرین نے آئندہ ایک دو روز میں ایک اہم اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا ۔ معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ اجلاس میں سردار غلام عباس خان کی مسلم لیگ ن سے علیحدگی کے بعد ضلع کونسل چکوال کے مستقبل اور دیگر امور کے بارے میں تبادلہ خیال کے علاوہ آئندہ کی حکمت عملی ترتیب دی جائے گی۔

ڈسٹرکٹ بار چکوال کے صدر ملک ضیغم عباس ایڈووکیٹ کی جنرل(ر) عبدالقیوم سے ملاقات

ڈھڈیال ( نامہ نگار)ڈسٹرکٹ بار چکوال کے صدر ملک ضیغم عباس ایڈووکیٹ اور جنرل سیکرٹری ملک زعفران زلفی نے گزشتہ روز اسلام آباد میں چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوارلیفٹیننٹ جنرل(ر) عبدالقیوم سے ان کی دفتر میں ملاقات کی جس میں انہیں وکلاء کی فلاح وبہبود او ردیگر قانونی امور کے بارے میں آگاہ کیا گیا ۔ سینیٹر لیفٹیننٹ جنرل( ر) عبدالقیوم نے بار صدر اور جنرل سیکرٹری کو اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔

ضلع میں اپنے پینل کی تشکیل کیلئے مشاورت شروع کردی

ڈھڈیال(ریاض بٹ)سردار گروپ کے قائد سردار غلام عباس خان نے مسلم لیگ ن سے علیحدگی کے اعلان کے بعد ضلع میں اپنے پینل کی تشکیل کیلئے مشاورت شروع کردی۔ سردار گروپ کے ذرائع کے مطابق سردار غلام عباس خان این اے64پر انتخابات میں حصہ لیں گے جبکہ پی پی 21میں وائس چیئرمین ضلع کونسل چوہدری خورشید بیگ اور پی پی 22میں میجر جنرل (ر ) حافظ مسرور احمد زیرغور ہیں۔ این اے65مسلم لیگ ق اور پی ٹی آئی کے اتحاد ہونے یا نہ ہونے کی صورت میں اپنی حکمت عملی سامنے لائی جائے گی ۔پی پی 23میں پیرجوجی شاہ اور سردار آفتاب اکبرخان کے درمیان نامزدگی کیلئے سخت مقابلہ ہے جبکہ پی پی 24میں سردار گروپ کی خاموش پالیسی پر عمل درآمد کرے گا۔ ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ اہم شخصیات سے رابطوں کا سلسلہ جاری رہے گا اور ایڈجسٹمنٹ کی صورت میں امیدواروں کی نامزدگی میں ردوبدل کیاجاسکتا ہے ۔ علاوہ ازیں معتبر ذرائع نے بتایا ہے کہ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے سردار غلام عباس سے رابطہ کیا ہے اور تازہ ترین صورت حال پر تبادلہ خیال کے علاوہ انہیں پیپلزپارٹی میں شمولیت کی دعوت دی ہے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سردا رگروپ تمام سیاسی حالات کا جائزہ لے کر اپنے نئے سیاسی مستقبل اور حکمت عملی کا اعلان کرے گا

مسلم لیگ ن کو زیادہ انہی منافقین نے نقصان پہنچا یا ہے، چوہدری ارشد علی خان

ڈھڈیال( نامہ نگار)مسلم لیگ(ن) بکھاری کے سرکردہ رہنما چوہدری ارشد علی خان نے کہا ہے کہ سردار غلام عباس کے مسلم لیگ ن کو خیر آباد کہنے سے مسلم لیگ ن کی صفوں میں منافقین بھی بے نقاب ہوگئے ہیں ۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کو زیادہ انہی منافقین نے نقصان پہنچا یا ہے ۔ یقیناًاب ان کو اپنے کیے پر پچھتاوا اورپشیمانی ہوگی ۔ چوہدری ارشد علی خان نے کہا کہ مسلم لیگ ن پوری طرح متحد ہے ۔ مسلم لیگ ن کے نظریاتی کارکنان منظم انداز میں اپنے سیاسی مخالفین کا مقابلہ کریں گے۔ چوہدری ارشد علی خان نے کہا کہ اب جو ہوا یہ ہونا ہی تھا لیکن ہمارے چند سیاستدانوں کو غلط فہمی تھی ۔ اچھا ہوا ان کی یہ غلط فہمی جلدہی دور ہو گئی۔

تحریک انصاف ضلع چکوال کے کارکنان کو راجہ یاسر سرفراز کی قیادت پر مکمل اعتماد ہے،سید اسد علی شاہ 

ڈھڈیال( نامہ نگار)سیکرٹری پولیٹیکل ٹریننگ شمالی پنجاب سید اسد علی شاہ نے کہاہے کہ پاکستان تحریک انصاف ضلع چکوال کے کارکنان کو راجہ یاسر سرفراز کی قیادت پر مکمل اعتماد ہے اور ان کے ساتھ ڈٹ کر کھڑے ہیں ۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی تمام موجودہ ضلعی قیادت الیکشن میں کامیابی حاصل کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کا ووٹ بینک 2013ء کے الیکشن کے مقابلے میں کئی گناہ بڑھ چکا ہے جس کا اندازہ ضمنی الیکشن کے رزلٹ سے کیا جاسکتا ہے ۔ چکوال کے کارکنان الیکشن کی تیاری شروع کریں۔ آئندہ الیکشن میں پی ٹی آئی ضلع چکوال کی تمام نشستوں پر ان شا ء اللہ بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل کرکے سیاسی پنڈتوں کو سرپرائز دے گی۔

نیب کا سامنا کرنے کو تیار ہوں، میجر(ر) طاہر اقبال

ڈھڈیال(نامہ نگار)ممبرقومی اسمبلی میجر(ر) طاہر اقبال نے کہا ہے کہ نیب کی جانب سے انہیں طلب کیا گیا ہے اور نہ ہی کوئی نوٹس ملا ہے۔ وہ لندن سے بات چیت کررہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ صا ف پانی منصوبہ پنجاب کے چیئرمین کی حیثیت سے انہوں نے جو بھی انتظامی امور اور دیگر اقدامات کیے وہ قواعد وضوابط کے مطابق کیے گئے اور کسی بھی رولز کی خلاف ورزی نہیں کی گئی ۔ میجر(ر) طاہر اقبال نے کہا کہ اگر نیب نے انہیں طلب کیا تو وہ پوری تیاری کے ساتھ نیب کا سامنا کرنے کو تیار ہیں۔ میجر(ر) طاہر اقبال نے کہا کہ مخالفین کو بے بنیاد پراپیگنڈے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا اور ہمیشہ کی طرح ناکامی ہی ا ن کے حصہ میں آئے گی۔ میجر(ر) طاہر اقبال نے کہا کہ مسلم لیگ ن ضلع چکوال میں پوری تیاری کیساتھ انتخابی میدان میں اترنے کیلئے تیارہے ۔ ضلع چکوال کے پارلیمنٹرین اپنے قائد میاں نوازشریف کے ساتھ ڈٹ کر کھڑے ہیں اور وہ کسی بھی صورت حال میں کسی دباؤ میں نہیں آئیں گے

محمد نوازشریف کے ساتھ ایک چٹان کی طرح کھڑے ہیں، سردار ممتازخان ٹمن 


ڈھڈیال(نامہ نگار)ممبر قومی اسمبلی سردار ممتازخان ٹمن کے دست راست ملک امیر خان ٹمن نے کہا ہے کہ ہم مسلم لیگ ن کے قائد میاں محمد نوازشریف کے ساتھ ایک چٹان کی طرح کھڑے ہیں۔ وہ گفتگو کررہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ سردار ممتازخان ٹمن کی پارٹی کے ساتھ وابستگی کسی شک وشبہ سے بالاتر ہے ۔پارٹی پر اس مشکل صورت حال میں ہم ڈٹ کرمیاں نوازشریف اور مسلم لیگ ن کے ساتھ ہیں۔انہوں نے کہا کہ سردار ممتازخان ٹمن کے بارے میں پھیلائی جانے والی افواہیں پراپیگنڈے کے سوا کچھ نہیں۔ ہم اپنے حلقہ میں الیکشن کیلئے پوری طرح تیار ہیں اور ان شاء اللہ ضلع میں مسلم لیگ ن اپنی ماضی کی روایات کو برقرار رکھتے ہوئے تمام نشستوں پر کامیابی حاصل کرے گی۔ ملک امیر خان ٹمن نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے خلاف تمام اتحاد بری طرح ناکام ہوں گے اور تلہ گنگ کے غیور عوام ایک بار پھر مسلم لیگ ن کو بھاری اکثریت سے کامیاب کروالیں گے

سردار غلام عباس خان کو فوری طور پر اپنے آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کرنا ہوگا

ڈھڈیال ( ریاض بٹ)مسلم لیگ ن2016میں اپنے پورے جوبن پر تھی مسلم لیگ ن کے پارلیمنٹرین بلدیاتی انتخابات میں اپنے اپنے پسندیدہ امیدواروں کی نامزدگیوں کیلئے ایک دوسرے کو نیچا دکھا نے میں لگے ہوئے تھے اس کا نتیجہ یہ نکلا کہ سردار غلام عباس کے حامی چیئرمین توقع کے برعکس زیادہ تعداد میں منتخب ہوگئے جس سے ان کی سیاسی طاقت میں اضافہ ہوا اور ساتھ ہی ان کو مسلم لیگ ن میں شامل کرانے والوں کو ایک اچھا موقع ہاتھ آگیا۔ دوسری جانب سردار گروپ کے چند مشیروں نے سردار غلام عباس کو یہ باور کرایا کہ اگر حکومتی چھتری کا سہارا نہ لیا تو سردار گروپ کے حامی چیئرمین مسلم لیگ ن میں شامل ہوجائیں گے اور سردار گروپ کی سیاسی طاقت بہت کمروز ہوجائے گی ۔ سردارگروپ کے قائد سردار غلام عباس جو بڑے منجھے ہوئے اور ایک زیرک سیاستدان ہیں۔معلوم نہیں مسلم لیگ ن میں سردار گروپ کی مخالفت ، پارلیمنٹرین اور دیگر رہنماؤں کی فوج در فوج کے باوجود کیوں اور کس لئے مسلم لیگ ن میں شامل ہوگئے ۔ ضلع کونسل چکوال کے چیئرمین اور وائس چیئرمین کے الیکشن میں انہیں پارلیمنٹرین کے ایک دھڑے کی بھرپور مخالفت کا سامنا کرناپڑا اور حکومتی دباؤ نہ ہوتا تو حکومتی نامزد کردہ پینل شکست سے دوچار ہوجاتا۔ پارلیمنٹرین کے اس دھڑے نے32ووٹ لے کر سب کو حیران کردیا۔مسلم لیگ ن میں شمولیت کے بعد سردار غلام عباس کبھی بھی خود کو مطمئن نہ کرپائے۔ اگرچہ شہریار اعوان اور چوہدری حید رسلطان کے ضمنی الیکشن میں وہ پوری فعال رہے لیکن ان کا گروپ ہمیشہ شاکی رہا کہ انہیں وہ اہمیت نہیں دی جارہی جس کے وہ مستحق ہیں۔سابق وزیر اعظم میاں نوازشریف کی کٹاس آمد اور حال ہی میں میاں شہبازشریفک کی چکوال آمد کے موقع پرسردارغلام عباس کی عدم شرکت ایک بار پھر سیاسی حلقوں میں موضوع گفتگو بن گئی ۔ مسلم لیگ ن کے حالات اچھے ہوتے تو شاید انہیں کسی سیٹ پر ایڈ جسٹ کرلیا جاتا لیکن موجودہ صورت حال میں مسلم لیگ ن کیلئے ممکن نہ رہا کہ وہ موجودہ سیٹ اپ کے ساتھ کوئی چھیڑ چھاڑ کر سکے ۔ پارلیمنٹرین کے رویہ اور موجودہ صورت حال کو مدنظر رکھتے ہوئے سردار غلام عباس نے اپنی نئی سیاسی منزل کیلئے اپنے قریبی ساتھیوں سے مشاورت مکمل کرلی ہے اور اس وقت وہ کئی بڑے سیاسی رہنماؤں سے رابطوں میں ہیں اور ضلع میں آئندہ کے سیٹ اپ کیلئے مشاورت جاری ہے ۔ امید کی جارہی ہے کہ آئندہ چند دنوں میں سیاسی منظر نامہ واضح ہوجائے گا۔ سردار گروپ کے حامی اب چاہتے ہیں کہ گروپ کے قائد سردار غلام عباس اب اپنے سیاسی فیصلہ کے اعلان میں تاخیر نہ کریں ۔ حالیہ تاخیر گروپ کیلئے بے چینی کا باعث ہے اور اعلان میں مزید تاخیر سے گروپ کی سیاسی ساکھ کو دھچکا لگ سکتا ہے ۔سردار گروپ کے حامی اب یہ ذہن بنا چکے ہیں کہ اب وہ مسلم لیگ ن کے ساتھ نہیں چل سکتے اور مسلم لیگ ن میں ان کیلئے کوئی نر م گوشہ نہیں ۔ پی ٹی آئی کے ساتھ سردار غلام عباس کے رابطوں کے کیا نتائج سامنے آتے ہیں اس کا فیصلہ بھی جلد متوقع ہے ۔سردار گروپ کے حامی مسلم لیگ ن سے جلد از جلد چھٹکارہ حاصل کرکے اپنی نئی صف بند ی کرنا چاہتے ہیں اس کیلئے سردار غلام عباس خان کو فوری طور پر اپنے آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کرنا ہوگا۔

چند عناصر ان کی کردار کشی میں مصروف ہیں،سردار غلام عباس

ڈھڈیال ( نامہ نگار)سابق ضلع ناظم اور سینئر لیگی رہنما سردار غلام عباس نے کہا ہے کہ وہ ن لیگ کا حصہ ہیں اس سلسلے میں پھیلائی جانے والی خبریں غلط ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ چند عناصر ان کی کردار کشی میں مصروف ہیں جس سے ان کے ورکرز میں بے چینی ہیں مگر میں اپنے تمام ساتھیوں کو یہ پیغام دینا چاہتا ہوں کہ وہ متحد رہیں۔ ان شاء اللہ میرا ہر فیصلہ ان کی بہتری کیلئے رہا ہے ۔مخالفین میری جماعت کے ساتھ وابستگی دیکھنے کیلئے سابق دو ضمنی الیکشن کو مدنظر رکھیں کہ کس طرح میرے ساتھیوں نے ڈٹ کر میرا اورپارٹی کا ساتھ دیا ۔ ان خیالات کااظہارانہوں نے گزشتہ روز ڈھڈیال پریس کلب سے ٹیلیفونک گفتگو میں کیا۔ سردار غلام عباس کا کہنا تھا کہ اگر کسی کومیری مقبولیت کے بارے میں شک ہے تو وہ پارٹی کی چھتری ہٹاکر آزاد حیثیت میں الیکشن لڑ کر دیکھ لیاانہیں آٹے دال کا بھاؤ معلو م ہوجائے گا۔میری شخصیت کو زبردستی نشانہ بنانا درست نہیں۔میرے ورکرز میرے دست وبازو ہیں انہیں ہرگز تنہا نہیں چھوڑا جائے گا۔مرکزی قیادت سے لاہور میں میری ملاقات ہوئی جس میں میں نے تمام حقائق ان کے گوش گزار کیے ہیں۔ شہبازشریف کا دورہ چکوال کے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سرکاری دورے پر آئے تھے اس میں میری شمولیت ضروری نہیں تھی۔ اس سلسلے میں بلاوجہ پروپیگنڈابند کیا جائے

error: